لیموں اور دہی سے بنافیس ماسک:

آج Femi.pk لایا ہے آپکے لیے کِچن کے اجزاء سے مختلف قسم کے فیس ماسک  بنانے کے طریقے۔ جن کو بنانے میں استعمال ہوتے ہیں صرف آپکے کچن سے قدرتی اجزاء، یہ ماسک بنتے ہیں بغیر کیمیکل اور کاسمیٹکس کے۔ یہ ماسک  مدد کرتے ہیں چہرے کی رنگت کو بہتر بنانے میں، چہرے کو شادابی دینے میں اور بڑھتی ہوئی عمر کے جلد  پر اثرات کم کرنے میں۔ انسانی جلد کو ہمیشہ حفاظت کی ضرورت ہوتی ہے، خاص طور پر پاکستان جیسے مُلک میں جہاں جلد کو برداشت کرنا ہوتی ہے تیز اور چمکدار دھوپ، آلُودگی، مِٹی اور دماغی تناؤ اور یہ تمام چیزیں چہرے کو بُجھا دیتی ہیں اور رنگت کو سنولا دیتی ہیں اور چہرہ کُملایا ہوا لگتا ہے۔یہ ماسک آزمُودہ ہیں اور جِلد کے لیے بہتر ہیں۔ تو آئیے مختلف اقسام کے فیس ماسک بنانا سیکھتے ہیں۔

اجزاء:

1 کپ دہی

1 کھانے کا چمچ لیموں کا رس

ترکیبِ استعمال:

دہی اور لیموں کو اچھی طرح مِلا کر پیسٹ بنا لیں۔ چہرے کو اچھی طرح دھو کر پیسٹ چہرے پر لگا لیں۔ 20 سے 30 مِنٹ تک پیسٹ چہرے پر لگا رہنے دیں۔ پھر چہرے کو صابن سے دھو لیں۔ اس عمل کو مہینے میں 4 سے 5 مرتبہ دہرائیں اور اثر دیکھیں۔

اس پوسٹ کو بھی پڑھیں:  انڈے کی سُفیدی اور کِھیرے سے بنا فیس ماسک

  • اگرچہ اُوپر بتائے گئے تمام اجزاء قُدرتی ہیں لیکن کُچھ لوگوں کو کُچھ اجزاء سے الرجی ہوتی ہے۔ خاص طور پر حساس جِلد والی خواتین پہلے چیک کر لیں کہ کسی چیز سے اُنکو الرجی تو نہیں۔ اگر ایسا ہو تو ماسک مت استعمال کریں۔
  • ہمیشہ تازے اور صاف سُتھرے اجزاء کا استعمال کریں۔ جِن اجزاء کو دھویا جا سکتا ہے اُنہیں پہلے اچھی طرح دھو لیں۔
  • اپنی آنکھوں اور ہونٹوں کو ماسک سے بچائیں۔ ماسک کو ہونٹوں اور آنکھوں سے کُچھ فاصلے پر لگائیں تاکہ ماسک کا اثر ہونٹوں اور آنکھوں تک نہ پہنچ سکے۔
  • اگر آپکو ماسک لگانے کے بعد چُبھن، خراش یا بے چینی محسُوس ہو تو فوراً چہرے کو دھو لیں۔
  • یہ ماسک فوری استعمال کے لیے ہوتے ہیں۔ لہٰذا ہر دفعہ تازہ ماسک بنائیں۔ ایک دفعہ ماسک کی بڑی مقدار بنا کر محفُوظ کرنا صحیح نہیں ہے۔
  • چہرے کو ہمیشہ تازے پانی سے دھوئیں۔
  • اگر آپ کے چہرے پر کِیل، مہاسے یا کٹاؤ/کریکس ہیں تو ماسک استعمال مت کریں۔
  • ماسک کو تجویز کیے گئے وقت سے زیادہ مت لگا رہنے دیں۔

Sharing is caring! پوسٹ شیئر کرنے پر آپ کا بے حد شکریہ

We would love to hear from you! - اپنی رائے سے ضرور آگاہ کیجیئے

comments